پی ٹی اے نے غیر رجسٹرڈ سوشل میڈیا کمپنیوں کے خلاف سخت کارروائی کی تجویز دے دی۔

پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی نے پاکستان میں غیر رجسٹرڈ سوشل میڈیا کمپنیوں کے خلاف کارروائی کی سفارش کی ہے۔ پی ٹی اے کی ایک دستاویز کے مطابق، اتھارٹی نے انفارمیشن ٹیکنالوجی اور ٹیلی کمیونیکیشن کی وزارت (MoITT) سے رہنمائی حاصل کرنے اور غیر تعمیل نہ کرنے والے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کے خلاف مزید کارروائی کا مشورہ دینے کے لیے رابطہ کیا ہے۔

پی ٹی اے کے مطابق تمام بڑے سوشل میڈیا پلیٹ فارمز جیسے فیس بک، ٹویٹر، یوٹیوب وغیرہ نے سوشل میڈیا رولز 2021 کے تحت رجسٹریشن کے حوالے سے اتھارٹی کی بار بار ہدایات کا مثبت جواب نہیں دیا۔ پاکستان کے قوانین کے مطابق مواد کو بلاک کرنے کی درخواستیں۔ کچھ سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کا ردعمل انتہائی حساس گستاخانہ مواد کے حوالے سے بہت کمزور ہے۔

پی ٹی اے نے تجویز دی ہے کہ پبلک سیکٹر کا کوئی ادارہ (وفاقی یا صوبائی) غیر رجسٹرڈ سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کے ساتھ کسی اقدام میں شامل نہیں ہوگا۔ پی ٹی اے نے یہ بھی تجویز کیا ہے کہ وفاقی حکومت تمام متعلقہ ریگولیٹرز جیسے ایف بی آر، اسٹیٹ بینک اور ایس ای سی پی کو مقامی طور پر رجسٹرڈ کمپنیوں کو غیر رجسٹرڈ اور غیر تعمیل نہ کرنے والی سوشل میڈیا کمپنیوں کے ساتھ کاروبار کرنے سے روکنے کے لیے ہدایات جاری کر سکتی ہے۔

پی ٹی اے نے سفارش کی ہے کہ سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کے ساتھ کسی بھی قسم کی مصروفیت سے پہلے، متعلقہ ادارہ پہلے سوشل میڈیا رولز کی تعمیل کے حوالے سے پی ٹی اے سے متعلقہ پلیٹ فارمز کا سٹیٹس چیک کرے۔ پی ٹی اے اپنے لائسنس دہندگان کو ہدایت کرے گا کہ وہ غیر موافق سوشل میڈیا پلیٹ فارمز کے ساتھ سہولت/اشتہارات بند کریں۔

اتھارٹی نے یہ تجویز بھی پیش کی ہے کہ اگر کمپنیاں رجسٹریشن اور رپورٹ شدہ غیر قانونی مواد بالخصوص گستاخانہ مواد کو ہٹانے کے حوالے سے عدم تعمیل کرتی رہیں تو سوشل میڈیا کمپنیوں کو نوٹس جاری کیے جائیں اور نئے سوشل میڈیا رولز کے تحت جرمانے عائد کیے جائیں۔ .

پی ٹی اے کے مشورے کے مطابق، ضابطہ 5(7)(ii)(a) کے تحت نان کمپلائنٹ پلیٹ فارمز کی خدمات کی وقتاً فوقتاً کمی کی جانی چاہیے۔ اگر کوئی کمپنی ان نوٹسز اور جرمانے کے باوجود عدم تعمیل کرتی ہے تو آخری حربے کے طور پر قاعدہ 5(7)(ii)(b) کے مطابق پورے آن لائن سسٹم کو بلاک کیا جانا چاہیے۔

Related Articles

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

Back to top button